جے کے این ایس ؍ تین پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملوث عسکریت پسندوں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لانے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے ریاست کے گورنر نے کہاکہ پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات کو موخر کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہاکہ پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے والے اُمیدواروں کو ہر طرح سے سیکورٹی فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ سیکورٹی فورسز نے رواں سال کے دوران درجنوں عسکریت پسندوں کو مار گرایا جس کے نتیجے میں ملی ٹینٹ تنظیموں میں حوصلہ شکنی پائی جا رہی ہے اور وہ اب پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ جے کے این ایس کے مطابق نجی نیوز چینل سے بات کرتے ہوئے ریاست کے گورنر ستیہ پال ملک نے شوپیاں مین تین پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کو ناقابل برداشت قرار دیتے ہوئے کہاکہ ملوث عسکریت پسندوں کو بہت جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔ گورنر کے مطابق تین اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات کو موخر کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہاکہ رواں برس کے دوران سیکورٹی فورسز کے عسکریت پسندوں کے خلاف کئی کامیاب آپریشن کئے جس کی وجہ سے ملی ٹینٹ تنظیموں میں حوصلہ شکنی پا ئی جار ہی ہے اور وہ پولیس اہلکاروں کونشانہ بنارہے ہیں۔ ستیہ پال ملک کے مطابق مستقبل میں اس طرح کے واقعات روکنے کیلئے حکومت نئی حکمت عملی اپنانے جار ہی ہے۔ تین پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد ایس پی اوز کی جانب سے مستعفی ہونے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں ستیہ پال ملک نے کہاکہ جن پولیس اہلکاروں نے استعفیٰ دیا وہ آپریشنل ڈیوٹی پر مامور نہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اب تک صرف تین سے چار ایس پی اوز نے استعفیٰ دے دیا ہے ۔پنچایتی اور بلدیاتی انتخابات کو موخر کرنے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں ریاست کے گورنر نے کہاکہ الیکشن کے دوران حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے وزارت داخلہ کی جانب سے مزید اضافی کمپنیوں کو وادی بھیجا جا رہا ہے۔ پی ڈی پی اور این سی کی جانب سے الیکشن بائیکاٹ کرنے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں ریاست کے گورنر نے کہاکہ 35اے کو بنیاد بنا کر الیکشن سے منہ پھیر لینا صحیح نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ مجھے یقین ہے کہ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی آنے والے بلدیاتی انتخابات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے۔

LEAVE A REPLY